موسم سرما میں ڈرائی فروٹ کے فوائد

ڈرائی فروٹ Dry Fruits benefits

موسم سرما جہاں اور بہت سی خوبیوں کا حامل ہے وہیں اس میں بھوک کی شدت بھی بڑھ جاتی ہے، عام دنوں میں جو چیزیں کھانے کو دل نہیں چاہتا سردیوں میں بار بار کھانے کی خواہش بڑھتی ہے ، یہی وجہ ہےکہ موسم سرما کے آتے ہیں بازاروں میں خشک میوہ جات اور ڈرائی فروٹ کے ٹھیلے جا بجا نظر آنے لگتے ہیں۔

گرم کپڑے، گرم کافی، گرم چائے کےساتھ اگر سردی کے موسم میں ڈرائی فروٹ نہ ہوں تو مزہ پھیکا پڑ جاتا ہے۔ڈرائی فروٹ کی اپنی الگ خاصیت ہوتی ہے، موسم سرما میں ان کی قیمتیں آسمان سے باتیں کرتی ہیں اس کے باوجود لوگ موسم انجوائے کرنے کی خوشی میں قیمت کی پروا کیے بغیر ڈرائی فروٹ کھانے کو ترجیح دیتے ہیں۔

یہ سب باتیں اپنی جگہ لیکن یہ بات بھی جاننے کی ضرورت ہےکہ جو ڈرائی فروٹ ہم شوق سے کھاتے ہیں وہ ہمارے لیے کس حد تک مفید ہیں اور اپنی اندر کتنی غذائیت اور وٹامنز چھپا کے رکھتے ہیں ۔ہر میوے کی اپنی خاصیت اور اہمیت ہے-

لیکن انسانی جسم کو جن اجزا کی ضرورت ہے ان کو کافی حد تک ڈرائی فروٹ کھا کے حاصل کیا جاسکتا ہے

بادام

بادام کی تاثیر گرم ہوتی ہے۔ لیکن چھلکا اُتارنے کے بعد معتدل ہوجاتی ہے۔ اس کو سیکڑوں طریقوں سے استعمال میں لایا جاسکتا ہے ۔ یہ دماغ کی کمزوری رفع کرتا ہے، جسمانی کمزوری میں ایک ٹانک کی حیثیت رکھتا ہے، قوتِ حافظہ کو بڑھاتا ہے بینائی تیز کرتا ہے، جِلد کی رنگت نکھارتا ہے جسم کو فربہی مائل کرتا ہے، مسوڑھوں اور معدہ کے لیے بہترین جراثیم کش ہے چُستی اور بشاشت پیدا کرتا ہے، بالوں کو لمبا کرتا ہے، کھانسی روکتا ہے۔

چلغوزہ

سرد موسم میں چلغوزے کی اہمیت میوہ جات میں پستے اور بادام کے بعد سب سے زیادہ ہے۔ اس کی تاثیر گرم ہوتی ہے اور طبی نقطۂ نظر سے اس کے فوائد بے حد قوت بخش ہیں۔یہ انسان کے اندرونی نظامِ کو محفوظ رکھنے کا سبب ہے ۔ یہ ایسا میوہ ہے جس سے انسان کا پیٹ نہیں بھرتا،بے پناہ لذت کا حامل ہونے کے ساتھ ساتھ یہ انتہائی قوت بخش ہوتا ہے۔

اخروٹ

اخروٹ گرم اور خشک ہوتا ہے۔ بے پناہ طاقت بخش غذا ہے۔ یہ کوئی ایسی غذانہیں ہے جس کو بیک وقت کھایا جاسکے، تاہم اس کی قلیل مقدار کے باوجود اس کی افادیت سے انکار نہیں کیاجاسکتا، پستہ بادام اور اخروٹ کو ملاکر کھانا ایک لذیذ ترین اور صحت بخش غذا ہے۔ دماغ کو طاقت دیتا ہے۔ سردی کی کھانسی میں بے حد فائدہ دیتا ہے۔ چربی میں اضافہ کرتا ہے ۔

پستہ

اس کی تاثیر گرم ہے لیکن اپنی تاثیر، قوت بخشی، لذت اور غذائی نوعیت میں یہ سب سے بڑھ کر ہے۔یہ پیٹ کی بے چینی کو دُور کرتا ہے دل کی دھڑکن کنٹرول کرتا ہے۔جسم موٹا کرتا ہے۔ معدہ کو تقویت دیتا ہے، قے اور متلی سے طبیعت کو ٹھیک کرتا ہے۔ ذہن کو قوی کرتا ہے جگر کے لیے بہترین ہے۔

کشمش

خشک انگور کو کشمش کہتے ہیں۔ سبز اور سفید دو قسم کی ہوتی ہے۔ سبز عمدہ ہے اس کے اجزا میں گلو کوز اور وٹامن بی اور سی شامل ہیں۔اس کامزاج گرم تر ہے۔ مغزیات کے ہمراہ سردیوں میں ایک چھٹانک روزانہ استعمال کرنا بے حد مفید رہتا ہے۔ کشمش جسم کو فربہ کرتی ہے۔ طبیعت میں فرحت لاتی ہے۔ دل کے امراض میں مفید ہے ایسے میں عرق گلاب میں بھگو کر کھانا بے حد مفید ہے۔

مونگ پھلی

اس کا شمار گرم اور خشک میوہ میں ہوتا ہے اس کے فوائد اور نقصانات برابر ہوتے ہیں۔ اس کا تیل بے حد فائدہ مند ہے اور اس کو گھی کی جگہ پر استعمال کیا جاسکتا ہے۔ اس میں غذائیت بھری ہوتی ہے لیکن یہ صر ف کھانے میں ہی استعمال کرنا چاہیے۔ بغیر کسی چیز کی ملاوٹ کے اس کا زیادہ استعمال نہیں کرنا چاہیے۔ یہ جسم کی افزائش کرتی ہے۔

چھوہارہ

یہ خشک تاثیر رکھتا ہے۔کھانوں میں اس کا استعمال لذت وتوانائی کا باعث بنتا ہے۔ یہ پیٹھ، کمر، گردوں کو قوت دیتا ہے، موٹا کرتا ہے ،رنگت نکھارتا ہے ،فالج میں فائدہ دیتا ہے، خون پیدا کرتا ہے، سینے اور پھیپھڑوں کو طاقت دیتا ہے اور پتھری کو توڑتا ہے۔فرخ اظہار